مبارک ہو شہِ جود و سخا کا چاند نکلا ہے

مبارک  ہو شہِ  جود و  سخا  کا  چاند   نکلا   ہے
سراپا      شاہکارِ    کبریا      کا  چاند   نکلا   ہے

خبر   دیتے  رہے  آ  آکے  جس  کی  انبیا   سارے
تمامی   خلق   کے   اس   رہنما  کا چاند  نکلا  ہے

جو اپنے دور میں مانگی تھی اپنے حق تعالیٰ سے
خلیل اللہ علیہ السّلام کی اب اس دعا کا چاند نکلا ہے

وہ جس کے واسطے کون ومکاں رب عزوجل نے بنائے ہیں

اسی   ذیشان   کا ذی   مرتبہ  کا   چاند   نکلا ہے

جو ہے  ایمان  اور  ایمان کی جاں فضل مولا سے
مِرے  دل  کی  افق  پر  اس  ولا  کا چاند نکلا ہے

کِھلے  ہیں  اس  لئے  چہرے  گنہگارانِ  امت   کے
شفیعِ   حشر،    فخرِ   انبیا   کا  چاند   نکلا   ہے

فلک کے چاند کو ہے رشک اس پتھر کی قسمت پر
وہ جس پرمصطفیٰ کے نقشِ پا کاچاند نکلا ہے

مسرت  یوں  ہے اب مفتاح عالم میں ہر اِک جانب
براے  خلق،  خالق عزوجل  کی رضا کا چاند نکلا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *