Aap Shamme Risalat Hai Parwane Lyrics in Urdu

آپ شمع رسالت ہیں پروانے ہم
اب ہم آخر یہاں سے کدھر جائینگے

زِندگی تو ہماری اسی در سے ہے
آپ سے دور ہونگے تو مر جائینگے

جس نے مانگا ہے قطرہ تو دریا دیا
جس نے دامن پسارا اُسے بھر دیا

بس سخاوت تمہاری ہمکو بھرم
خالی دامن کبھی ہم نا رہ جائینگے

ذات میں ہم تو سرور نکارے صحیح
پھِر بھی نسبت ہماری نیاری صحیح

بس تمہاری شفاعت پہ ہمکو بھرم
خلد میں بھی اے پیارے اگر جائینگے

مثلِ پروانہ ہم آپکو ڈھونڈھتے
صبحِ صادق بھی آقا اب ہونے کو ہے
جبکہ دیدار ہم آپکا پائینگے
گر قدموں میں آقا ہم مر جائینگے

جائے اجمیر کو جائے بغداد کو
شاہ طیبہ کسی کے بھی دربار کو
ایک سوال اُن سے ہر دم یہ کرتے رہے
یا ولی کب مدینے کو ہم جائینگے

عرض دل سے یہ اشرف کی آقا سنو
ہاں بظاھر ہے ناصر کے لب پر مگر
جب میں آؤں مدینے میں دیدار کو
کہنا دیوانے اب تم کدھر جاؤگے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *