Darde Dil Kar Mujhe Ata Ya Rab Lyrics

Darde Dil Kar Mujhe Ata Ya Rab Lyrics

 

 

Dard e Dil kar mujhe ata Ya Rab
De mere dard ki dawa Ya Rab

Be sabab baksh de na pooch amal
Naam Ghaffar hai tera Ya Rab

Yuh gumoo ke mai tujh se mil jau
Yuh gumaa is tarha mila Ya Rab

Aib mere na khol mehshar me
Naam Sattar hai tera Ya Rab

Har bhale ki bhalai ka sadqa
Mujh nikamme ko kar bhala Ya Rab

Laaj rakhle gunahgaron ki
Naam Rehman hai tera Ya Rab

Khaak kar apne Aastane ki
Yuh hame khaak me mila Ya Rab

Meri ankhe mere liye tarse
Mujh se aisa mujhe chupa Ya Rab

Tees kam ho na Dard e Ulfat ki
Dil tadapta rahe mera Ya Rab

Teri jaanib yeh Musht e Khak ude
Bhej aisi koi hawa Ya Rab

“Sabaqat Rahmati Alaa Ghazabi”
Tune jab se sunadiya Ya Rab

Tu Aasra hum gunahgaro ka
Aur mazboot ho gaya Ya Rab

Ahle Sunnat ki har jamat par
Har jaga ho teri ata Ya Rab

Dushmanon ke liye hidayat ki
Tujh se karta hu iltija Ya Rab

Meri maan meri behnain bhanjay sab
Pa’ayn Araam-e-do sara Ya Rab

Aur bhi jitne pyaare hai
Hajatain sab ki ho rawa Ya Rab

Mere ahbab par bhi fazl rahe
Tera tere habeeb ka Ya Rab

Tu Hasan Ko utha Hasan Karke
Ho Ma’al khair khaatima Ya Rab

 

 

Dard e Dil Kar Mujhe Ata Ya Rab in Urdu

دردِ دل کر مجھے عطا یا رب
دردِ دل کر مجھے عطا یا رب
دے مرے دَرد کی دَوا یارب

لاج رکھ لے گنہگاروں کی
نام رحمن ہے ترا یا رب

عیب میرے نہ کھول محشر میں
نام ستار ہے ترا یا رب

بے سبب بخش دے نہ پوچھ عمل
نام غفار ہے ترا یا رب

زخم گہرا سا تیغ اُلفت کا
میرے دل کو بھی کر عطا یارب

یوں گموں میں کہ تجھ سے مل جاؤں
یوں گما اس طرح ملا یا رب

بھول کر بھی نہ آئے یاد اپنی
میرے دل سے مجھے بھلا یارب

خاک کر اپنے آستانے کی
یوں ہمیں خاک میں ملا یارب

میری آنکھیں مرے لئے ترسیں
مجھ سے ایسا مجھے چھپا یارب

ٹیس کم ہو نہ دَردِ اُلفت کی
دل تڑپتا رہے مرا یا رب

نہ بھریں زخم دل ہرے ہو کر
رہے گلشن ہرا بھرا یا رب

تیری جانب یہ مشتِ خاک اُڑے
بھیج ایسی کوئی ہوا یا رب

داغِ اُلفت کی تازگی نہ گھٹے
باغ دل کار ہے ہرا یا رب

سَبَقَتْ رَحْمَتِیْ عَلٰی غَضَبِیْ
جب سے تو نے سنا دیا یارب

آسرا ہم گناہگاروں کا
اَور مضبوط ہو گیا یارب

ہے اَنَا عِنْدَ ظَنِّ عَبْدِیْ بِیْ
میرے ہر دَرد کی دَوا یارب

تونے میرے ذلیل ہاتھوں میں
دامنِ مصطفٰے دیا یارب

تو نے دی مجھ کو نعمتِ اسلام
پھر جماعت میں لے لیا یارب

کر دیا تو نے قادِری مجھ کو
تیری قدرت کے میں فدا یارب

دولتیں ایسی نعمتیں اتنی
بے غرض تو نے کیں عطا یارب

دے کے لیتے نہیں کریم کبھی
جو دِیا جس کو دے دِیا یارب

تو کریم اور کریم بھی ایسا
کہ نہیں جس کا دُوسرا یارب

ظن نہیں بلکہ ہے یقین مجھے
وہ بھی تیرا دِیا ہوا یارب

ہو گا دنیا میں قبر و محشر میں
مجھ سے اچھا معاملہ یارب

اس نکمے سے کام لے ایسے
یہ نکما ہو کام کا یارب

مجھے ایسے عمل کی دے توفیق
کہ ہو راضی تری رضا یارب

جس نے اپنے لئے برائی کی
ہے یہ نادان وہ برا یارب

ہر بھلے کی بھلائی کا صدقہ
اس برے کو بھی کر بھلا یارب

میں نے بنتی ہوئی بگاڑی بات
بات بگڑی ہوئی بنا یارب

میں نے سُبْحٰنَ رَبِّیَ الْاَعْلٰی
خاک پر رکھ کے سر کہا یارب

صدقہ اس دی ہوئی بلندی کا
پستیوں سے مجھے بچا یارب

بونے والے جو بوئیں وہ کاٹیں
یہ ہوا تو میں مر مٹا یارب

آہ جو بو چکا ہوں وقت دِرَوْ
ہو گا حسرت کا سامنا یارب

صدقہ ماہِ رَبیع الاوّل کا
گیہوں اس کھیت سے اُگا یارب

پاک ہے دُرد و دَرد سے جو مئے
جام اس کا مجھے پلا یارب

کر کے گستر دہ خوانِ اُدْعُوْنِیْ
تو نے بندوں کو دی صلا یارب

آستاں پر تِرے ترا منگتا
سن کرآیا ہے یہ صدا یارب

نعمتِ اَسْتَجِبسے پائے بھیک
ہاتھ پھیلا ہوا مرا یارب

تجھ سے وہ مانگوں میں جو بہتر ہو
مُدَّعی ہو نہ مُدَّعا یارب

مجھے دونوں جہاں کے غم سے بچا
شاد رکھ شاد دائما یارب

مجھ پر اور میرے دونوں بھائیوں پر
سایہ ہو تیرے فضل کا یارب

عیش تینوں گھروں کے تینوں کو
اپنی رحمت سے کر عطا یا رب

میرے فاروق و حامد و حسنین
دَرد و غم سے رہیں جدا یارب

لخت دل مصطفیٰ حسین رضا
ہر جگہ پائیں مرتبہ یارب

سایۂ پنجتن ہو پانچوں پر
دائما ہو تیری عطا یارب

دونوں عالم کی نعمتیں پائے
مرتضیٰ بہر مصطفیٰ یارب

علم و عمر و عمل فراخ معاش
مجتبیٰ کو بھی کر عطا یارب

کر دے فضل و نعم سے مالا مال
غم اَلم سے انہیں بچا یارب

ان کے دشمن ذلیل و خوار رہیں
رَد رہے ان کی ہر بلا یارب

بال بیکا کبھی نہ ہو ان کا
بول بالا ہو دائما یارب

میری ماںمیری بہنیں بھانجے سب
پائیں آرامِ دَوسرا یارب

اَور بھی جتنے میرے پیارے ہیں
حاجتیں سب کی ہوں رَوا یارب

میرے اَحباب پر بھی فضل رہے
تیرا تیرے حبیب کا یارب

اَہل سنت کی ہر جماعت پر
ہر جگہ ہو تری عطا یارب

دشمنوں کے لئے ہدایت کی
تجھ سے کرتا ہوں اِلتجا یارب

تو حسنؔ کو اُٹھا حسن کر کے
ہو مع الخیر خاتمہ یارب

از قلم- مولانا حسن رضا خان بریلوی
کتاب : ذوق نعت

Darde dil kar mujhe ata ya rab lyrics in urdu

 

Leave a Reply